باربی کیو کا گوشت انسانی صحت کے لیے مفید

لندن : عید قربان پر باربی کیو کا اپنا ہی ایک مزہ ہے اور ہر گھر میں اسکا اہتمام کیا جاتا ہے، گوشت کے پکوان کئی طریقوں سے بنائے جاتے ہیں لیکن باربی کیو مقبول ترین طریقہ ہے اور صحت بخش بھی ہے۔

عید کے دنوں گھروں میں باربی کیو کرنے کا رواج بہت پرانا ہے اور رات کو گھر کی چھتوں پر یا صحن میں بیٹھ کر تکے بوٹی کھانے کا مزہ ہی کچھ اور ہوتا ہے۔

حال ہی میں امپیریئل کالج لندن کے ماہرین کی جدید تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ مصالحہ لگا کر میرینٹ ہوا اور ہلکی آنچ پر پکا گوشت ذائقے دار ہوتا ہے جبکہ ہلکی آنچ پر کھانے پکانے میں تیل بھی کم استعمال ہوتا ہے۔

ماہرین کے مطابق گوشت پکاتے وقت ہمیشہ ادرک لہسن کا استعمال ضرور کریں کیونکہ ادرک لہسن کا پیسٹ گوشت کے موجود مضر اجزاء کو ناکارہ بنانے میں مدد دیتا ہے جبکہ دل کی شریانوں میں چربی جمنے سے روکتا ہے۔

برطانوی ماہرین کے مطابق گوشت کو بوٹیوں کی با نسبت قیمے کی صورت میں پکاکر کھانا زیادہ مفید ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ گوشت کو روسٹ کرتے وقت اگر اس میں خشخاش ، رائی، خشخاش، ناریل، بادام اور املی کے پیسٹ اور ہری مرچ اور لہسن کا پیسٹ استعمال کریں تو اس سے نہ صرف گوشت کا ذائقہ بڑھ جائے گا بلکہ مضر اثرات بھی ختم ہوجائیں گے۔

باربی کیو بنانے وقت ایک بات کا خیال رکھیں کہ گوشت کو بہت زیادہ نہیں جلائیں کیونکہ ایسا کرنے پر ایسے کیمیکلز پیدا ہوتے ہیں جو صحت کیلئے خطرناک ہوسکتے ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت
Loading...