بل کی ادائیگی کے لیے نیا سسٹم متعارف

بیجنگ: چین کی ایک کمپنی نے بل کی ادائیگی کے لیے نیا سسٹم متعارف کروادیا جس کے بعد اب کریڈٹ کارڈ یا کیش کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق دنیا بھر میں بسنے والے لوگ کیش اور بینک کارڈ اپنے پاس رکھنے سے گھبراتے ہیں اسی وجہ سے سائنسی ماہرین تجربات کر کے ادائیگیوں کے لیے نت نئے طریقے متعارف کروارہے ہیں۔

بینک کارڈز کے متعارف ہونے سے قبل لوگ کیش رکھنے سے کتراتے تھے جسے دیکھتے ہوئے ماہرین نے بینک کارڈ کا کامیاب تجربہ کیا جو اب دنیا کے تمام ہی ممالک میں استعمال کیا جارہا ہے۔

بینک ڈیبٹ یا کریڈٹ کارڈز کے غلط استعمال سے صارفین پریشان ہوئے تو سائنسی ماہرین اس پریشانی کو بھی دور کرنے کی کوشش میں لگے رہے تاہم اب چین میں کامیاب تجربے کے بعد بل کی ادائیگی کے لیے نیا سسٹم متعارف کروادیا۔

چین کے ایک ریسٹورنٹ میں تجرباتی طور پر یہ سسٹم نصب کیا گیا ہے جس کے تحت ہوٹل میں کھانا کھانے والے شخص کو کیمرے کے سامنے کھڑا ہونا ہوگا اور پہچان کے بعد اُس کے بل کی رقم ادا ہوجائے گی جو بعد میں بینک اکاؤنٹ سے کاٹ لی جائے گی۔

ویڈیو دیکھیں

کمپنی کے مطابق اب صارفین کو کیش، بینک کارڈ یا موبائل ڈیوائس رکھنے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ ’اسمائل ٹو پے‘ نامی سہولت کے ذریعے اب وہ اپنے بل باآسانی ادا کرسکیں گے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

قالب وردپرس

Loading...