قرآن شریف کی بے حرمتی کرنے والا سعودی نوجوان گرفتار

ریاض: سعودی عرب میں قرآن شریف کی بے حرمتی کرکے ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرنے والے نوعمر لڑکے کو گرفتار کرلیا گیا۔

سعودی عرب کے اخبار عکاظ کے مطابق سعودی نوجوان نے قرآن شریف کی بے حرمتی اور ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کردی جس کے بعد سوشل میڈیا پر اس نوجوان سے شدید نفرت کا اظہار کیا گیا اور نوجوان کو گرفتار کرکے گردن زنی قرار دینے کا مطالبہ کیا گیا جس کے بعد نوجوان کو اس قبیح فعل کے جرم میں اتوار کی رات کو گرفتار کیا گیا۔

اس ضمن میں ریاض پولیس کے ترجمان جنرل فواز المیمن نے بتایا کہ ریاض پولیس کے پاس یہ صلاحیت موجود تھی کہ وہ نوجوان کو شناخت کرکے اس کا ٹھکانہ تلاش کرلے چنانچہ نوجوان کو ڈھونڈ کر گرفتار کرلیا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ وہ ایک 15 سالہ نوجوان ہے اس لیے اسے سماجی خدمات کے حراستی مرکز میں رکھا گیا ہے، ریاض کے پراسیکیوٹر آفس کو اس واقعے کی اطلاع دے دی گئی ہے اور جلد لڑکے کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

خیال رہے کہ ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد سوشل میڈیا استعمال کرنے والے ہزاروں نے اس پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا اور ٹوئٹر پر ہیش ٹیگ بھی چلایا تاکہ اسے سزا دے جاسکے۔

لوگوں نے یہ ویڈیو شیئر نہیں کی کہ اس سے لوگوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچے گی تاہم لوگوں نے اس نوجوان کی تصویر خوب شیئر کی اور حکام سے اسے سزا دینے کا بھرپور مطالبہ کیا۔

سوشل میڈیا پر متعدد افراد نے نوجوان کو سزائے موت یعنی سرقلم کرنے کا مطالبہ کیا۔

قالب وردپرس

Loading...