خواتین کی پینٹ میں جیبیں چھوٹی کیوں ہوتی ہیں؟

کراچی: عام طور پر مشرقی اور مغربی خواتین کے لباسوں میں فرق دیکھنے میں آتا ہے تاہم پتلون اور شرٹ ایسا لباس ہے جو گزشتہ کچھ برسوں میں اپنی...

کراچی: عام طور پر مشرقی اور مغربی خواتین کے لباسوں میں فرق دیکھنے میں آتا ہے تاہم پتلون اور شرٹ ایسا لباس ہے جو گزشتہ کچھ برسوں میں اپنی اہمیت کو کافی حد تک بڑھا چکا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وکٹورین دور میں خواتین کے پینٹ شرٹ کا فیشن اُس وقت سامنے آیا کہ جب برطانوی خواتین بناؤ سنگھار کے لیے بھاری بھرکم لباس استعمال کرتی تھیں۔

اٹھارویں صدی کے بعد سے خواتین کے فیشن میں بہت سی تبدیلیاں آئیں جن میں پینٹ شرٹ بھی شامل ہے ورنہ اس سے قبل یہ لباس صرف مرد زیب تن کرتے تھے۔

دنیا کی ترقی اور خواتین کا امور خانہ داری کے علاوہ دفتری کاموں میں رجحان جیسے جیسے بڑھنا شروع ہوا ویسے ویسے پینٹ شرٹ کا فیشن بھی دنیا بھر میں رائج ہوتا گیا۔

خواتین نے جب گھروں سے باہر نکلنا شروع کیا تو اُن کے ہاتھوں میں قیمتی سامان و دیگر اہم چیزیں ہوتی تھیں، اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے پرس (بٹوے) تیار کیے گئے، ابتدائی طور پر بنائے جانے والے پرس چھوٹے ضرور تھے مگر وقت کے ساتھ ان کے سائز میں اضافہ ہوتا رہا۔

امور خانہ داری چھوڑ کر خواتین نے جب گھروں سے باہر نکلنا شروع کیا تو اُن کے لیے بھاری بھرکم لباس تکلیف دہ ثابت ہوئے اس لیے فی الوقت پینٹ شرٹ کا فیشن سامنے آیا، چونکہ یہ لباس مردوں کا تھا اس لیے خواتین تیار کیے جانے والے پینٹ شرٹ کی جیبیں چھوٹی رکھی گئی۔

وقت گزرتا رہا اور دنیا میں ترقی کا پیہ گھومتا رہا تو یہ فیشن مغرب سے اٹھ کر مشرق میں بھی آنپہنچا اور اب خواتین کی کثیر تعداد جینس و دیگر پینٹس زیب تن کیے دکھائے دیتی ہیں۔

خواتین کے لیے تیار کی جانے والی پتلونوں میں یا تو جیبیں (پاکٹ) چھوٹے رکھے جاتے ہیں یا پھر انہیں بغیر جیب کے بنایا جاتا ہے، پینٹ میں جیبیں نہ ہونے کی اہم وجہ یہ ہے کہ عموماً خواتین اپنے ہمراہ بیگ لے کر چلتی ہے جس میں وہ پیسے و دیگر اہم اشیاء رکھ سکتی ہے اس کے برعکس مردوں کے پاس کچھ نہیں ہوتا تو اُن کی پینٹ میں بڑی جیبیں رکھی جاتی ہیں۔

قالب وردپرس

Loading...
Categories
خواتین

RELATED BY