آنگ سانگ سوچی کا شدید تنقید پر اقوام متحدہ کے اجلاس سے بائیکاٹ کافیصلہ

میانمار: روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام پر ملک کی سربراہ آنگ سان سوچی نے شدید تنقید پر اقوامِ متحدہ کے اجلاس کے بائیکاٹ کا فیصلہ کیا ہے۔ تفصیلات کے...
burma

میانمار: روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام پر ملک کی سربراہ آنگ سان سوچی نے شدید تنقید پر اقوامِ متحدہ کے اجلاس کے بائیکاٹ کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق میانمارکی صورتحال اور روہنگیا مسلمانوں کےبحران پر شدید تنقید کے بعد آنگ سان سوچی نے اقوام متحدہ کے اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ترجمان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ آنگ سان سوچی اقوامِ متحدہ کے اجلاس میں شرکت نہیں کریں گی۔

خیال رہے کہ نوبل انعام یافتہ آنگ سان سوچی کو روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام پر خاموشی اختیار کرنے پر تنقید کا سامنا ہے، آنگ سان سوچی کو اگلے ہفتے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں شرکت کے لیے نیویارک جانا تھا۔

دوسری جانب میانمارکی صورتحال اورروہنگیا مسلمانوں کے بحران پر غور کے لئے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس آج ہوگا، اقوام متحدہ کا کہنا ہے گھربارچھوڑکربنگلہ دیش کا رخ کرنے پر مجبور روہنگیا مسلمانوں کی تعداد میں دن بدن اضافہ ہو تا جا رہا ہے۔

میانمارکی فوج اور بودھ انتہا پسندوں کے مظالم کا نشانہ بننے والے بے یارومددگار روہنگیا مسلمان بدترین حالت میں بنگلہ دیش آمد کا سلسلہ تھم نہ سکا نیٹ لاکھوں روہنگیا خواتین،بچے اورمردغذائی قلت کا شکار ہیں اور مختلف بیماریوں میں مبتلا ہورہے ہیں، شدیدبارشوں نے پناہ گزینوں کی مشکلات میں مزید اضافہ کردیا۔

ایک اندازے کے مطابق اب تک 4 لاکھ روہنگیا مسلمانوں نے بنگلہ دیش میں پناہ لی ہے۔

یاد رہے کہ اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی نمائندہ خصوصی برائے میانمار یانگ ہی لی نے روہنگیا مسلمانوں پر ہونے والے وحشیانہ ظلم کی مذمت کرتے ہوئے ملک کی سربراہ آنگ سان سوچی کی ہزاروں روہنگیامسلمانوں کے قتل پرمجرمانہ خاموشی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ سلم نسل کشی کی ذمہ دار کیا آنگ سان سوچی کوبے حسی کاانعام ملنا چاہی

اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی نمائندہ خصوصی برائے میانمار یانگ ہی لی نے کہا ہے کہ دنیا اور خاص طور پر روہنگیا مسلمان آنگ سان سوچی کا انتظار کر رہے ہیں، اب وقت آگیا ہے کہ معاملے کے حل کے لیے ‘قدم اٹھائیں۔

قالب وردپرس

Loading...
Categories
انٹرنیشنل

RELATED BY