آرمی چیف کا افغان زمین پاکستان کے خلاف استعمال ہونے پر اظہار تشویش

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے امریکی وزیر دفاع سے ملاقات میں بھارت کی جانب سے افغان سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال کرنے پر تشویش کا اظہار کیا...

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے امریکی وزیر دفاع سے ملاقات میں بھارت کی جانب سے افغان سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال کرنے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے جی ایچ کیو میں ملاقات کی جس میں افغانستان سمیت خطے کی سیکیورٹی صورت حال اور دو طرفہ امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق ملاقات میں آرمی چیف نے پاک امریکا تعلقات کی طویل تاریخ بالخصوص خطے میں امن کے لیے موجودہ مثبت کوششوں کو سراہا۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق جنرل قمر جاوید باجوہ نے ملاقات میں کہا کہ پاکستان نے امن کے لیے اپنی استطاعت اور وسائل سے زیادہ کام کیا اور ہم بین الاقوامی برادری کے ایک ذمہ دار رکن کی حیثیت سے اپنی کوششیں جاری رکھنے کے لیے پُرعزم ہیں۔

 

آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل قمر جاوید باجوہ نے خطے میں امن و استحکام کے لیے پاکستان کے عزم کو دہراتے ہوئے بھارت کی جانب سے پاکستان کے خلاف افغان سرزمین کو دہشت گردی کے لیے استعمال کرنے پر تشویش کا اظہار کیا۔ پاک فوج کی جانب سے جاری بیان کے مطابق آرمی چیف نے افغان مہاجرین کی باعزت طریقے سے جلد واپسی اور افغانستان میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کی موجودگی کے حوالے سے پاکستان کے تحفظات کا بھی اظہار کیا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق جیمز میٹس نے دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی مسلح افواج کی جانب سے موثر کاررائیوں کو تسلیم کیا۔ انہوں نے کہا کہ کچھ عناصر پاکستان کی سرزمین استعمال کرتے ہوئے افغانستان میں دہشت گردی کی کارروائیاں کر رہے ہیں۔
ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے کہا اپنے حصے کا کام کر چکے، افغانستان سے دہشتگردوں کی پناہ گاہیں ختم کی جائیں، جیمزمیٹس نے پاکستان کی کاوشوں اور قربانیوں کا اعتراف بھی کیا۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق جیمز میٹس نے کہا کہ امریکا پاکستان کے حقیقی تحفظات کے تدارک کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کے لیے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد پاکستان سے کوئی مطالبہ کرنا نہیں ہے لیکن ہم مشترکہ مفادات کے حصول کے لیے مل کر کام کرنا چاہتے ہیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے پاکستانی موقف کو سمجھنے پر امریکی وزیر دفاع کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں امریکا سے سوائے معاملات کو سمجھنے کے کسی بھی چیز کی ضرورت نہیں ہے۔ پاک فوج کے مطابق جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ ہم نے اپنی سرزمین سے شدت پسندوں کی محفوظ پناہ گاہوں کا خاتمہ کیا اور جو تخریب کار افغان مہاجرین کے لیے پاکستان کے جذبہ مہمان نوازی کا غلط فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں ہم ان سے نمٹنے کے لیے بھی تیار ہیں۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق آرمی چیف اور امریکی وزیر دفاع نےباہمی خدشات کو دور کرنے کے لیے مخصوص شعبوں میں مستقل تعاون پر اتفاق کیا۔ دوسری جانب امریکی سفارت خانے کی جانب سے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ جیمز میٹس نے جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات میں دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کوسراہا اور کہا کہ پاکستان اور امریکا مل کر افغان امن عمل میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔

خیال رہے کہ امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس ایک روزہ دورے پر پاکستان پہنچے تھے جہاں انہوں نے وفد کی صورت میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے بھی ملاقات کی تھی۔

قالب وردپرس

Loading...
Categories
پاکستان

RELATED BY